بڑے باپ کا بیٹا ہو گا گھر میں اسے فوری گرفتار کریں چیف جسٹس ثاقب نثار نےحکم جاری کر دی

لاہور (ویب ڈیسک)سپریم کورٹ آف پاکستان نے زیر زمین پانی کے استعمال کے کیس میں مضر صحت پانی پر ایک کمپنی کا پلانٹ بند کرنے کا حکم دیدیا،ڈی جی فوڈاتھارٹی سے بدتمیزی پر عدالت کمپنی مالک پربرہم ہو گئی ،چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ بڑے باپ کابیٹا گھرمیں ہوگا،اسے گرفتارکرکے مقدمہ درج کریں۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس

ثاقب نثار کی سر براہی میں دو رکنی بنچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں زیرزمین پانی کے استعمال کے کیس کی سماعت کی،پانی ،مشروبات بنانے والی گیارہ کمپنیوں کے مالکان عدالت میں پیش ہوئے، چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ ناقص پانی کی فروخت پر مقدمات کیوں درج نہیں کرائے گئے،ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے کہا کہ نجی کمپنیوں کو نوٹس بھجوائے گئے تھے مگر انتظامیہ نے وصول کرنے سے انکارکیا ،آڈیٹر جنرل نے بتایا کہ ڈیڑھ لیٹر پانی کی بوتل پر پیکنگ سمیت 8 روپے 79 پیسے لاگت آتی ہے،چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت پانی کی قیمت کم کرنے پر غور کر رہی ہے،شہریوں کی زندگیوں کا معاملہ ہے عدالت سخت کارروائی کرے گا،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ جب تک بڑے آدمی پر ہاتھ نہیں ڈالا جائے گا وہ ٹھیک کام نہیں کرے گا،پاکستان میں تیسری دنیا والا امتیازی سلوک نہیں ہونے دینگے۔ڈی جی فوڈاتھارٹی سے بدتمیزی پر عدالت کمپنی مالک پربرہم ہو گئی ،چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ بڑے باپ کابیٹاگھرمیں ہوگا،اسے گرفتار کرکے مقدمہ درج کریں،معافی مانگنے پرعدالت نے کمپنی مالک کوگرفتاری سے روک دیا،عدالت نے مضر صحت پانی پر ایک کمپنی کا پلانٹ بند کرنے کا حکم دیدیا،چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ صاف پانی فروخت کرنے والی کمپنیاں قابل تحسین ہیں،تمام کمپنیاں مل بیٹھ کرمعاملات ٹھیک کریں ،عدالت نے ملک میں پانی فروخت کرنے والی کمپنیوں کو 10 دن خامیاں دور کرنے کی ہدایت کردی اورعدالت کمیشن کو کمپنیوں کے معائنے کی ہدایت کردی۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

صحت